ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے

اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV

منگل، 14 جون، 2016

یہاں پھر کون ، کس کو یاد رکھتا ہے سدا ،حامدؔ /جدا ہوتے ہی لہروں کو کنارے بھول جاتے ہیں/ حامد یزدانی

حامد یزدانی
ذرا سے پر نکلتے ہی پرندے بھول جاتے ہیں
انہیں کس ماں نے پالا تھا یہ بچے بھول جاتے ہیں
فقط بوڑھی ہَوا کو یاد رکھنے کی ہے عادت سی
یہاں سے کون گزرا تھا؟ یہ رستے بھول جاتے ہیں
یہ چہرے ہیں کہ ہیں کچے سبق پہلی جماعت کے!
ذرا سی دیر میں سارے کے سارے بھول جاتے ہیں
نہ گزرے گا کوئی بھی قافلہ اس دشت سے لیکن
دِیا سا دل کے کونے میں جلا کے بھول جاتے ہیں
یہاں پھر کون ، کس کو یاد رکھتا ہے سدا ،حامدؔ
جدا ہوتے ہی لہروں کو کنارے بھول جاتے ہیں

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں