اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


جمعرات، 13 اپریل، 2017

پلٹ کے آئے گا فردا ، گذشتہ کی جانب / نگار خانۂ امروز کی نشانی رکھ / علی اصغر عباس

علی اصغر عباس
نیامِ حرف میں شمشیر سے معانی رکھ
کمانِ شوق میں اک تیر سی کہانی رکھ
نکل بھی خواب گزیدہ حصارِ نوم سے آنکھ
نمودِ حسن کی یوں تو نہ پاسبانی رکھ
پلٹ کے آئے گا فردا ، گذشتہ کی جانب 
نگار خانۂ امروز کی نشانی رکھ
کسی خیال میں لا اُس کی بے خیالی کو
کبھی دھیان میں اُس کی بھی بے دھیانی رکھ
نزولِ عشق ، مصیبت ہی ناگہانی ہے
یہ ناگہانی ، ہمیشہ ہی ناگہانی رکھ
یہ زادِ راہِ محبت ہے، عشرتِ غم ہے
میاں سنبھال کے یہ دردِ جاودانی رکھ
اداس آنکھ کی جو دلکشی بڑھانی ہے
تو اس میں یاد کا صہبا نشاط پانی رکھ
رگوں میں خون کی گردش فشار خیز نہ ہو
توُ چشم زار میں اشکوں کی بھی روانی رکھ
جواں ترنگ ہے اصغر ترا بڑھاپا بھی
سرُور خیزیٔ الفت کی شادمانی رکھ

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں