ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


سوموار، 21 مارچ، 2016

شاعری کا عالمی دن ہے یہ آج/ ہے جو فکروفن کا دلکش امتزاج ۔۔ احمد علی برقی اعظمی

احمد علی برقی اعظمی
شاعری کا عالمی دن ہے یہ آج
ہے جو فکروفن کا دلکش امتزاج
شاعری ہی ہر ادب کی جان ہے
جو بدل ڈالے زمانے کا مزاج
ہے یہ یونسکو کی اک دریا دلی
دے رہا ہے آج جو اس کو خراج
شعر تھا پہلے ”حدیثِ دلبری“
آج ہے یہ آئینہ دارِ سماج
میرؔ و غالبؔ کا تغزل آج تک
لے رہا ہے اہلِ دانش سے خراج

توڑ کر اقبالؔ نے فکری جمود
کردئے پیدا نئے رسم و رواج
ہے غزل آئینہئ نقد و نظر
منعکس ہے جس میں رودادِ سماج
کرتی ہے حالات کا یہ تجزیہ
اب نئی قدروں کا ہے اس میں رواج
سب ہیں عصری آگہی سے ہمکنار
اب ہے اردو شاعری کا یہ مزاج
گردشِ حالات ہے اس سے عیاں 
ہے امیرِ شہر خودسر،بدمزاج
وہ نہ جانے کیوں ہے مجھ سے بدگماں 
بدگمانی کا نہیں کوئی علاج
شاید اس کو یہ نہیں معلوم ہے 
چار دن کی چاندنی ہے تخت و تاج
دامنِ انسانیت ہے تار تار
کررہے ہیں لوگ ہر سو احتجاج
ہیں بہم دست و گریباں خیر و شر
ہے یہی برقیؔ زمانے کا رواج

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں