ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


جمعرات، 28 جنوری، 2016

یہ خامشی تو مری ذات کا حوالہ ہے ۔۔ شہناز مزمل

شہناز مزمل
میں کھو گئی ہوں مگر اب گمان بولے گا
مکیں بغیر یہ خالی مکان بولے گا
یہ خامشی تو مری ذات کا حوالہ ہے
میں گم ہوں عشق میں میرا گیان بولے گا
تمازتوں سے بچاتا جو ماں ہے ممتا ہے
یقیں دلانے کو ہر سائبان بولے گا
سفینہ لانے کو ساحل پہ جاں سے کھیلا ہوں
ہر ایک ٹوٹا ہوا بادبان بولے گا
زمانے بھر کی سمیٹی ہے تیرگی شب نے
ملے گی جب بھی زباں آسمان بولے گا
جو میری روح مرے جسم و جاں میں بستا ہے
وہ آج تیرے میرے درمیان بولے گا
اگرچہ میرا جنوں مجھ کو بے خبر کردے
زمین بولے گی سارا زمان بولے گا

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں