ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


بدھ، 24 جون، 2015

اک شکل تھی پھولوں کی طرح یاد نہیں ہے ۔۔ انور زاہدی

انور زاہدی
اب یاد نہیں کس کو کہاں بھول گئے ہیں
دینی تھی دعا جس کو جہاں بھول گئے ہیں
اک شکل تھی پھولوں کی طرح یاد نہیں ہے
کیا پھول تھے کیا شکل سماں بھول گئے ہیں
اُڑتے ہیں پرندے جو فضا میں وہ کسی کے
کیا نام ہے اُن کا وہ زماں بھول گئے ہیں
انجان نگاہوں سے یوں تکتا ہے مجھے شھر
ہیں کون سی گلیاں وہ مکاں بھول گئے ہیں
موسم بھی یہاں پہلے کی مانند نہیں ہیں
یہ کون سی رُت ہے وہ یہاں بھول گئے ہیں
دُہراو گے تو یاد کہاں آئے گا انور
ہم یاد ہی کرنے کا نشاں بھول گئے ہیں

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں