ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


منگل، 25 نومبر، 2014

ہجر کی مسافت میں ،چاند ساتھ چلتا ہے .. ساحرہ محمود

 ساحرہ محمود
رات کے اندھیرے میں ،اک دیا سا جلتا ہے
ہجر کی مسافت میں ،چاند ساتھ چلتا ہے
ان گھنے درختوں کی ،خامشی بتاتی ہے
کوئی اک نیا طوفاں ،راستے بدلتا ہے
سردیوں کے موسم میں ،سرد سرد جھونکوں سے 
زخم پھر سے رِستا ہے ،درد پھر سے پلتا ہے
یہ کسی کو کیا معلوم ایک قطرهِ نایاب
کتنے مرحلوں کے بعد ،روشنی میں ڈھلتا ہے
ظرف پہ یہ ممکن ہے،چوٹ سب کو لگتی ہے
کون ٹوٹ جاتا ہے ،کون پھر سنبھلتا ہے
ریت سوکھی بنجر سی ،دھوپ تیز شدت کی
اور وجود دہقاں کا ،موم سا پگھلتا ہے
ہاتھ سے گرا لقمہ دے رہاہے عندیہ پھر
کوئی تھر کے صحرا میں بھوک سے مچلتا ہے
کتنے سال لگتے ہیں دل کا خون دےدے کر
خواب کوئی سجتا ہے،پھول کوئی کھلتا ہے

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں