ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


منگل، 30 ستمبر، 2014

فریبِ چشم تھا، وہ واہمہ خیال کا تھا ۔۔ زبیر قیصر

زبیر قیصر
اٹھا ہوں گر کے ، مرا حوصلہ کمال کا تھا
گو منتظریہ زمانہ مرے زوال کا تھا
قریب ِ مرگ کہیں راز قربتوں کا کُھلا
فریبِ چشم تھا، وہ واہمہ خیال کا تھا
تمام لوگ جو بولےتو میں بھی چیخ اٹھا
جواب جانے یہ کس شخص کے سوال کا تھا
گھٹا میں ،پھولوں میں ، پیڑوں میں ،چاند تاروں میں
جہان بھر میں ہی جلوہ ترے جمال کا تھا
یہ میرے دوست کسی طور میرے دوست نہیں 
عدو تھا ایک مگر کس قدر کمال کا تھا

1 تبصرہ: