ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے

اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV

اتوار، 28 ستمبر، 2014

بیداری۔۔۔۔۔۔ رضیہ سبحان

رضیہ سبحان
وقت کے روز و مہ و سال گزرتے جائیں
اے مرے دل،مرے ہمرازِ محبت جاگو !!
لذتِ خواب سے مخمور نگاہیں کھولو
مستیء حسن میں ڈوبی یہ ادائیں چھوڑو
چشم، ویراں سے ذرا اشکِ ندامت تو بہیں
گردشِ وقت جو روٹھی ہے مناؤ تو اُسے
کرچیاں دیدہء حیران کی چنتے جاؤ
گونج اس نغمہء ماضی کی بھی سنتے جاؤ
غیض و غم درد و ستم روگِ محبت سہہ لو
ظرف قائم ہی رہے،حرفِ زباں سے نہ کہو


جذبِ خوابیدہ کا پھر سوگ منانے اُٹھو
مرگِ اُلفت کا کوئی نوحہ سُنانے اُٹھو
تم نے سمجھا ہے کہ موت آئے گی، سو جاؤگے
یہ فقط وہم و گماں سوچ کی عیاری ہے
سچ تو کچھ اور ہے ۔اے دل مرے غافل نہ رہو
بعد از مرگ عبث سونے کی تیاری ہے
زندگی نیند یہاں، موت ہی بیداری ہے

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں