اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


ہفتہ، 30 اگست، 2014

تعبیر نہ بھی ہو تو اشارہ تو دیکھنا ۔۔ انور زاہدی

انور زاہدی
ٹوٹا ہے آسمان سے تارہ تو دیکھنا
کس جان پہ گرے گا ستارہ تو دیکھنا
میں منظر افلاک میں کھویا رہا یونہی
تم دیکھنا زمیں کا نظارہ تو دیکھنا
کل کا پتہ نہیں ہے یہی بات ہے بھلی
گذرا ہے آج کیسے ہمارا تو دیکھنا
اُس نے کہا تھا جاتے ہوئے ایک مرتبہ
خالی مکاں کے در میں سہارا تو دیکھنا
ہوتا ہے دلفریب بہت خواب دیکھنا
تعبیر نہ بھی ہو تو اشارہ تو دیکھنا
ملتی ہے روز روز صبا اس طرح کہاں
مل جائے تمہیں گر وہ ستارہ تو دیکھنا
دریا ہے ایک عمر کا انور نہیں رُکا
کرتے ہوئے عبور کنارہ تو دیکھنا


کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں