اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


اتوار، 3 اگست، 2014

نہ فکر نیند کی ہمیں نہ جاگنے کی آرزو ۔۔ افراسیاب کامل

افراسیاب کامل
کہاں چلیں کہ دوستو ہر ایک گام رات ہے
کہیں پہ دام دن کا ہے کہیں پہ دام رات ہے
یہ زر نگار روشنی شراب کی شباب کی
یہ چاندنی سے کھیلتی سیاہ فام رات ہے
کشید دن کروں گا میں کسی افق سے پھر کہیں
مرے خیال کی تپش میں ہی تمام رات ہے
یہ کون پی گیا ہے سب شرابِ زر میں چاندنی
یہ کون مے کدے میں ہے یہ کس کا جام رات ہے
ابھی سے نیند آ گئی چراغ شب تجھے مگر
ابھی تو ایک ان کہی مری تمام رات ہے
نہ فکر نیند کی ہمیں نہ جاگنے کی آرزو
عجب مقام دن یہاں عجب مقام رات ہے
دبیز تہہ دھویں کی ہے یہاں پہ دن کے وقت بھی
میں اس دیار میں رہا جہاں مدام رات ہے
یہ چاندنی ہے فرش پر کسی حسیں کے پاوں کی
غزل چھڑی ہوئی ہے اور یہ ہم کلام رات ہے
زمین دوز دل جہاں کہ روزنِ حواس تک
اسی کا نام دن یہاں اسی کا نام رات ہے

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں