ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے

اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV

منگل، 12 اگست، 2014

ہم مسافر ہیں ہمیں لوٹ کے جانا بهی تو ہے ۔۔عائشہ صدیقی/ہما بجنوری

عائشہ صدیقی
ہم مسافر ہیں ہمیں لوٹ کے جانا بهی تو ہے
زندگی تجھ کو مگر پار لگا نا بهی تو ہے
میں تیرے عشق میں افسانہ بنی بیٹهی ہوں
تو جب آئے گا تجهے پڑهہ کے سنانا بی تو ہے
اُس طرف مجهہ کو بلاتی ہے محبت تیری
اِس طرف راه میں حائل یہ زمانہ بهی تو ہے
بس یہی سوچ کے دروازہ کهلا چهوڑ دیا
شام ہوتے تجهےگهر لوٹ کے آنا بهی تو ہے
جو تیرے ہجر میں ناسور ہوا جاتا ہے
دل کا وہ زخم مجهے تجهہ کو دکهانا بهی تو ہے
بس یہی سوچ کے سامانِ سفر باندھ لیا
وہ بُلائے گا اگر لوٹ کے جانا بهی تو ہے

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں