اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


بدھ، 16 جولائی، 2014

دریا جیسی آنکھوں والے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ علی زیرک

علی زیرک
پیڑ کی ہر اک شاخ تو سایہ دیتی ہے
برف بدن کو دھوپ دلاسا دیتی ہے
اے میری خاموشی مجھ سے باہر آ
تو میری آنکھوں کو گِریہ دیتی ہے
آجاتی ہے خوشبو میرے کمرے میں
اور پھر میری نیند پہ پہرہ دیتی ہے
دریا جیسی آنکھوں والے اب تجھ کو
صحرا کی وحشت آوازہ دیتی ہے
ٹھنڈی آگ میں جلتے جسموں کی حدّت
پھلنے سے پہلے اک جھٹکا دیتی ہے

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں