اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


اتوار، 27 جولائی، 2014

تُمہارے عشق کا اب تک خُمار اُترا نہیں ۔۔ انور زاہدی

انور زاہدی
ابھی سرور ہے باقی غبار اُترا نہیں 
تُمہارے عشق کا اب تک خُمار اُترا نہیں
خزاں بہار بنی اور فصل گُل پت جھڑ 
مگر رُتوں کا ابھی تک شُمار اُترا نہیں
عجیب کیفیت ہے بے کلی کہیں جس کو
خیال تیری پناہ میں حصار اُترا نہیں
تمام رات رہا حبس وہ قیامت کا 
ہوا چلی نہ زمیں نم بُخار اُترا نہیں
میں بے قرار رہا عمر بھر تڑپنے کو 
کہ جیسے ایک سمندر قرار اُترا نہیں
دیا سا جلتا رہا گھر میں آخر شب تک 
تھا انتظار وہ جس کا کنار اُترا نہیں
بہت حکائتیں ہیں بیتے دنوں کی انور
بہت سی یاد رہیں پر نکھار اُترا نہیں

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں