ادبستان اور تخلیقات کے مدیرِاعلیٰ رضاالحق صدیقی کا سفرنامہ، دیکھا تیرا امریکہ،،بک کارنر،شو روم،بالمقابل اقبال لائبریری،بک سٹریٹ جہلم پاکستان سے شائع ہو گیا ہے،جسے bookcornershow room@gmail.comپر میل کر کے حاصل کیا جا سکتا ہے
اردو کے پہلے لائیو ویب ٹی وی ،،ادبستان،،کے فیس بک پیج کو لائیک کر کے ادب کے فروغ میں ہماری مدد کریں۔ادبستان گذشتہ پانچ سال سے نشریات جاری رکھے ہوئے ہے۔https://www.facebook.com/adbistan


ADBISTAN TV


جمعرات، 29 مئی، 2014

سب جلتا ہے ..ابرار احمد

ابرار احمد
ہر جانب بارش ہوتی ہے
اور خواب اترنے لگتے ہیں
ٹھنڈک لے کر
دہلیز پہ دستک دیتی ہے
چاہت سے پاگل ہوا کوئی
اور دل میں خوشبو پھیلتی ہے
اور شام اترنے لگتی ہے
پھر اندھیارے کی خاموشی میں
آگ سلگنے لگتی ہے
کیوں آگ سلگنے لگتی ہے ؟
وہ آگ جو تیرے باہر ہے
وہ آگ جو میرے اندر ہے
سب جلتا ہے
آواز کے مخزن سے
ہر گوش سماعت تک
لفظوں کی شاخوں ، نظموں کے جنگل میں
اڑتے پرندوں تک
کہساروں سے میدانوں تک
بازاروں سے گلیاروں تک
فردا کے رخ سے تا بہ ابد 
 قبروں سے گھر تک
کپڑوں سے دروازوں تک
 ہر خواب سے
خوشبو کی چوکھٹ تک
جلتا ہے 
 کن دنوں کی راکھ ہے
کانٹے چبھے ہیں آنکھوں میں
اک آگ ہے
دل میں لگی ہوئی
اک آگ ہے ..دل میں بجھی ہوئی

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں